Monthly Archives: 2013 اپریل

پاکستان میں پہلی اُوپن جیل۔۔۔ از۔شمس جیلانی

پاکستان میں پہلی اوپن جیل۔۔۔ از۔شمس جیلانی ویسے تو ہمیشہ سے پورا ملک ہی اوپن جیل ہے رہا۔ جس کا احساس سب کو ہے مگر کہتا کوئی نہیں ہے؟ اس لیے کہ ہر ایک کو ڈر لگتا ہے ان سے … کو پڑھنا جاری رکھیں

شائع کردہ از Uncategorized

اکیلا چنا بھاڑ نہیں پھوڑ سکتا؟۔۔۔۔از ۔شمس جیلانی

اس محاورے سے جو بات ظاہر ہوتی ہے وہ بظاہر تو شدت پسندی یعنی توڑ پھوڑ پر ختم ہوتی ہے جبکہ یہ محاورہ جن مواقعوں پر استعمال ہو تا ہے وہ استعمال قطعی تعمیری ہے یعنی کہنے والے کا مطلب … کو پڑھنا جاری رکھیں

شائع کردہ از Articles

دھن ، دھونس ، دھاندلی ، لوٹو کھاؤ،شیطان کرے بھلی ۔۔۔ شمس جیلانی

ہمیشہ سے ہم دیکھتے آرہے ہیں کہ جب بھی ہم منزل کی طرف بڑھے، یکایک چلتے چلتے رک گئے، جیسے کہ کسی نے ہاتھ باندھ دیئے ہوں ، پاؤوں میں بیڑیاں ڈالدی ہوں، یا یکایک بریک لگا دیئے ہوں؟ ابھی … کو پڑھنا جاری رکھیں

شائع کردہ از Uncategorized

جہل کا نام رکھدیا دانشوری ہے ۔۔۔ از شمس جیلانی

آجکل قوم پربڑا مشکل وقت آیا ہوا ہے۔ ہر شخص پریشان ہے کہ کیا چھپائے اور کیا بتا ئے؟ گوکہ پاکستان کی آبادی٢٠٠٨ ءکے مقابلہ میں تین کروڑ بڑھ گئی ہے مگر اس مرتبہ صرف ١٧٠٨١ امید وار میدان میں … کو پڑھنا جاری رکھیں

شائع کردہ از Articles